Let we struggle our way

Posts Tagged ‘Nisar baloch’

کہاں تک سنو گے – کہاں تک سناؤں

In Baloch genocide, Disappearences, FC, isi, mi on January 18, 2011 at 3:30 am

کہاں تک سنو گے – کہاں تک سناؤں


تحریر نواز بگٹی

آج کا دن صبح ہی سے بلوچ عوام کے لئے غم و اندوہ کا سامان لئے ہوۓ تھا ، جب پہلی خبر ڈیرہ بگٹی سے شکل بگٹی کی غاصب فوج کے ہاتھوں شہادت کی خبر آئ – ابھی دہشت زدہ ہی بیٹھے تھے کہ پچھلے دنوں کوئٹہ کے ایک مقامی ہوٹل سے گرفتار کیے جانے والے دو نامور بلوچ گلوکاروں ، علی جان ثاقب ، اور شہزاد ندیم کی مسخ شدہ لاشیں بیسیمہ کے پاس سڑک کنارے مل گئیں – ماتم کناں آنکھوں کی نمی خشک ہونے ہی نہیں پائی تھی کہ اورماڑہ کے پاس گزشتہ دنوں اغوا کیے گۓ دو بلوچ رہنماؤں نصیر کمالان ، اور احمد داد بلوچ کی مسخ شدہ لاشیں ملیں – بلوچ قوم کے لئے ١٧ جنوری کی سیاہ صبح کا خونی اختمام یہاں بھی نہیں ہوتا ، ابھی ایک اور لاش بھی ملنی تھی ، اور وہ لاش تھی شہید نثار بلوچ کی جنھیں لسبیلہ سے اغوا کیا گیا تھا
کہاں ہیں وہ نواز شریف و الطاف حسسیں نام کے ڈرامے باز ، جو ہر روز جعلی انقلاب کی باتیں کرتے ہیں – جو عوام کو اپنی طاقت گردانتے ہیں ، کہاں ہیں پیپلز پارٹی کے چور اچکے ، کہاں ہیں اسفند یار والی اور اسکے حواری ؟ کراچی کے نا معلوم قاتلوں کے خلاف انکا غصہ ہے کہ تھمتا نہیں ، اور بلوچ عوام کے قاتلوں کو جانتے ہوۓ بھی ایک لفظ تک انکے منہ سے نہیں پھوٹتا
کیا سمجھتے ہیں یہ پاکستانی بزدل افواج کہ اپنی اذیت گاہوں میں بلوچ نوجوانوں کو قتل کر کے اپنی غاصبانہ قبضے کو دوام دے پائیں گے ، یا پاکستان کی بیغیرت عوام اس لئے آنکھیں بند کیے بیٹھی ہے کہ انکی افواج انکے لئے بلوچستان کو فتح کر لیں گی ؟ کیا یہ سمجھتے ہیں کہ بلوچوں کا خون بہا کر اپنے لئے لعل و گہر کا بندوبست کر پائیں گے ؟ یہ سب ان کی بھول ہے – بلوچ اپنے بلند و بالا پہاڑوں کی طرح پرعزم قوم ہے – بلوچوں سے ٹکرانے والے یہ ظالم و جابر ، جدید ترین ہتھیاروں کے زور پر بلوچوں کو نقصان تو پہنچا سکتے ہیں لیکن انکے اپنے سر کا پھوٹنا بھی تقدیر کا فیصلہ ٹھہرا
بلوچ شھداء کو خراج تحسین پیش کرنا میرے بس کی بات نہیں – بس اتنا جانتا ہوں کہ وطن عزیز کو اپنے خون سے سیراب کرنے والے یہ محسن ہمیشہ بلوچ قوم کے دلوں پر راج کرتی رہے گی – اور انکی عظمت پر آسمانوں کو بھی رشک آ رہا ہوگا – آج موت کا فرشتہ بھی اپنے کیے پر نادم ہوگا ، لیکن عظمتوں کی معراج ہمیشہ جانی قربانیوں سے ہی حاصل کی جاتی ہیں

Advertisements